Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

"کیا ہم اپنے نبی سرورِ دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کو ان احمق قوموں کی تہذیب کی خاطر ترک کر دیں؟"


حضرت حذیفہ بن الیمان رضی اللہ عنہ مشہور اور جلیل القدر صحابی تھے۔
ایک مرتبہ ایک نئے مفتوحہ ملک کی ایک دعوت میں کھانا کھاتے ہوئے ان کے ہاتھ سے لقمہ گِر گیا، آپ نے سرورِ دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت اور تعلیم کے مطابق لقمہ اُٹھا کر صاف کیا اور کھا لیا، اس پر قریب بیٹھے ہوئے ساتھی نے کہا کہ گِرے ہوئے لقمے کو اٹھا کر کھانا یہاں کے آداب کے خلاف ہے اور اس سے یہ لوگ کہہ سکتے ہیں، مسلمان مفلس اور لالچی ہیں۔
اس پر حضرت حذیفہ رضی اللہ عنہ نے یہ ایمان افروز جملہ ارشاد فرمایا:
"کیا ہم اپنے نبی سرورِ دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کو ان احمق قوموں کی تہذیب کی خاطر ترک کر دیں؟"

از۔ سنہرے واقعات

Views: 263

Reply to This

Replies to This Discussion

subhanallah

nice

keep it up

SubhanAllah

great sharing

thnx   amina

Masha ALLAH ....boht aala g....

thnx Ehsanullah Farooqi

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service