Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

دل چاہتا ہے"
تم آفس سے تھک کے آؤ
آکر میری گود میں لیٹو
پھر میں تمھارے بال سِہلاؤں
تم مجھ کو اپنے آفس کی
دن بھر کی رُوداد سناؤ
باتوں باتوں میں پھر جاناں
ذکر کرو اک دوشیزہ کا...اُس کی محبت اور وفا کا
تب میں رُوٹھ کے موڈ بناؤں
آنکھوں میں آنسو بھر لاؤں
پھر تم ہنس کے سوری بولو
میرے کانوں میں رس گھولو
"دل چاہتا ھے"
سردی کے موسم میں کسی دن
بُک لے کر تم لان میں بیٹھو
ھر سو بکھری دھوپ کو سینکھو، مجھکو سوچو
تب میں تمھارے پیچھے آکر اپنے ٹھنڈے یخ ہاتوں کو
تیری آنکھوں پر جو رکھ دوں
تم جھنجھلاؤ موڈ بناؤ،
آنکھوں سے ہاتوں کو ہٹاؤ
لیکن پھر جب مجھ کو دیکھو
ہنس کر جاناں خوش ہو جاؤ
"دل چاہتا ھے"
جب بھی کبھی پیارا موسم ہو
رم جھم بارش اور گھٹا ہو
تب میں تمھارے سنگ سنگ جاناں
تارکول کی لمبی سڑک پر
چلتی جاؤں چلتی جاؤں
دل کی باتیں خوب سناؤں
"دل چاہتا ہے"
جب بھی مجھے کوئی دکھ تڑپائے
بات کروں اور آنکھ بھر آئے
دنیا نت نئے زخم لگائے
تب تم میرے سامنے آؤ
دھیرے سے چہرے کو اٹھاؤ
اور یہ پوچھو کیوں روئی ہو؟
تب میں آنسو پونچھ کے ہنس دوں
تیرے کندھے پر سر رکھ دوں
پلکیں موندوں اور سو جاؤں
ہر دکھ سے بے خبر ہو جاؤں
دل چاہتا ہے جان جاناں
"دل چاہتا ہے"

Views: 228

Reply to This

Replies to This Discussion

CLassic.. <3

DiL chahta hai.. <3 <3

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service