ایک بار جیل میں میرا لیکچر آرگنائز کرنے والے نے میرے لیکچر کے بعد مجهے کہا کیوں ناں ہم کوٹهڑی لگے لوگوں کے سامنے سے بهی گزریں. میں نے کہا ٹهیک ہے. اور ہم کوٹهڑیوں کے سامنے سے گزرتے، میں سلام کرتا، حال احوال پوچهتا، صبر کی تلقین اور اللہ سے معافی مانگنے کو کہتا. لوگ خوش ہو رہے تهے کہ اچانک ہمارا گزر ایک ایسی کوٹهڑی کے سامنے سے گزرا جس میں بمشکل 20 یا 22 سال کا نوجوان قصاص کے انتظار میں بند تها. چہرے کی معصومیت بتاتی تهی کہ یہ قاتل نہیں ہو سکتا. پوچها تو پتہ چلا کہ بیوی کو چهری... سے ٹکڑے ٹکڑے کر کے قتل کر کے یہاں پہنچا ہوا ہے.
تفصیل یوں بتائی گئی کہ اس کی شادی ہوئی، شادی کی چٹهیوں کے بعد کام پر لوٹا تو ساتهیوں نے اس کے ساته ڈراما کرنے کا پروگرام بنایا. ایک دن ایک ساتهی نے آ کر اسے کہا مبارک ہو تو نے نئی ٹویوٹا کار لے لی ہے! اس نے کہا نہیں تو... اس آدمی نے کہا اچها؛ تیرے گهر کے سامنے ایک ٹویوٹا کهڑی تهی جس میں سے اتر کر ایک نوجوان تیرے گهر گیا اور گهنٹہ بهر کے بعد واپس چلا گیا تها.
دو ایک دن کے بعد پهر اسے ایک ساتهی نے آ کر کہا یہ امریکی کار والا جوان کون ہے جس کے ساتھ تیری بیوی آج جارہی تهی اور پهر وہ نوجوان تیری بیوی کو دو گهنٹے بعد واپس چهوڑ کر گیا تها؟
اس بار اس نوجوان نے گهر جا کر بیوی کو آو دیکها نا تاو، چهری سے ذبح کر دیا.
یہ نوجوان چاہتا تو بیوی سے بحث و مباحثہ بهی کر سکتا تها کہ میرے کولیگ یوں کہتے ہیں، کیا سچ اور کیا جهوٹ ہے، یا پهر والدین کی اس لاڈلی بیٹی کو واپس بهی چهوڑ کر آ سکتا تها کہ یہ میرے قابل نہیں ہے. مگر شیطانوں میں پهنس کر انتہائی قدم اٹها بیٹها جس کیلئے قران پہلے ہی تنبیہ کر چکا ہے.
يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا إِن جَاءَكُمْ فَاسِقٌ بِنَبَإٍ فَتَبَيَّنُوا أَن تُصِيبُوا قَوْمًا بِجَهَالَةٍ فَتُصْبِحُوا عَلَىٰ مَا فَعَلْتُمْ نَادِمِينَ ﴿٦﴾
اے مسلمانو! اگر تمہیں کوئی فاسق خبر دے تو تم اس کی اچھی طرح تحقیق کر لیا کرو ایسا نہ ہو کہ نادانی میں کسی قوم کو ایذا پہنچا دو پھر اپنے کیے پر پشیمانی اٹھاؤ (الحجرات.6)
ڈاکٹر محمد العریفی