We have been working very hard since 2009 to facilitate in learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

سبک رفتار لمحوں کی حدیں ترتیب دیتا ہوں
سحر کے سانسیں گنتا ہوں شبیں ترتیب دیتا ہوں

مرے یاروں کی فطرت میں یہ کیسا وصف شامل ہے
وہی مجھ کو مٹاتے ہیں جنہیں ترتیب دیتا ہوں

خزاں نے خشک پتوں میں صدائیں بانٹ رکھی ہیں
میں ان کی سرسراہٹ سے دھنیں ترتیب دیتا ہوں

تجھے سوچوں تو پہلو میں مچل جاتا ہے میرا دل
سو دل پہ ہاتھ رکھ کر دھڑکنیں ترتیب دیتا ہوں

بکھر جاتا ہے پسپا ہوکے جب لشکر ارادوں کا
نئئ قوت سے پھر اپنی صفیں ترتیب دیتا ہوں

میں پہناتا ہوں لفظوں کو معانی کی قبا
ساگر
غزل کہتا ہوں ان کی صورتیں ترتیب دیتا ہوں

Views: 264

Reply to This

Replies to This Discussion

zabardastttttt

nice sharingggg

keep it up

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service