Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.


" آپ جانتی ہیں ' جب آدم علیہ سلام اور حوا جنّت میں رہا کرتے تھے؛ اس جنّت میں جہاں نہ بھوک تھی نہ پیاس' نہ دھوپ اور نہ ہی برہنگی.. تب الله نے انھے ایک ترغیب دلاتے درخت کے قریب جانے سے روکا تھا' تا کے وہ دونوں مصیبت میں نہ پڑ جایں." وہ سانس لینے کو رکا ..." اس وقت شیطان نے ان دونوں کو ترغیب دلائی کے اگر وہ اس ہمیشگی کے درخت کو چھولیں تو فرشتے بن جاینگے یا پھر ہمیشہ رہینگے..انھے کبھی نہ پرانی ہونے والی بادشاہت ملیگی .. سو انہوں نے درخت چکھ لیا....حد پار کرلی ... تو انکو فورن بے لباس کردیا گیا.. اس پہلی رسوائی میں جو سب سے پہلی شے جس سے انسان نے خود کو ڈھکا تھا' وہ جنّت کے پتے تھے

Views: 395

Reply to This

Replies to This Discussion

nic

thanks

g main kal abi Quran majeed sy ia ka tarjama par rai teh yah 16th pary ky 2nd last rahko main udr deehk kr bari khusi hoi

very nice post

Great Post

thanks

jazak Allah 

nice post

RSS

© 2022   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service