Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

ممتاز قادری اور سلمان تاثیر - ایک نظریاتی جنگ۔۔۔۔

Assalam o Alaikum all ning Friends,

I am compelled to write this writeup on the special request of a friend, so kindly bother with me. It will be highly desirable, if you friends could please read the following article published in the Dawn, before preceding to what I intend to say...

Readworthy Article:

The Untold Story of Pakistan's blasphemy law

http://www.dawn.com/news/1149558

کسی دوست کے اصرار پریہ پوسٹ بنانی پڑی۔ ننج کے دوست پہلے ہی کافی بحث اور ورللڈ وار کی حد تک اس معملہ پہ بات کر جکے ہیں۔ الحمد للہ اس معملہ پر میں نے کوئی جار سال پہلے ریسرج کی تھی، علماء سمیت چوّل مارنے کے لئے دنیا میں بڑے لوگ موجود ہیں جن کی وجہ سے توہین رسالت جیسا حساس معملہ بھی ڈاوٹ کا شکار نظر آتا ہے۔ اوپر والے آرٹیکل کو زرا غور سے پڑھنے اور سمجھنے کی کوشش کریں۔ تاکہ میری بات کو آپ بہتر سمجھ سکیں۔ ورنہ مجھے خود کش حملے سے زیادہ کفر کے فتوہ سے ڈر لگتا ہے۔

میری نظر میں یہ ایک دینی جنگ نہیں، یہ ایک نظریاتی جنگ ہے جس کے مین پلیئرز سیاسی مقاصد رکھتے ہیں۔

اس بحث کو دوبارہ شروع کرنا میرا مقصد نہیں، بس وہ چند باتیں شیئر کرنا جاہتا ہوں جو میں نے کافی محنت سے حاصل کی ہیں۔ اصل مسئلہ ہم لوگوں کا یہ ھے کہ ہم بہت سی باتوں کو مکس کر کے کنفیوز ہو رہے ہیں۔

پہلی بات کے کسی شخص کو اس بات پہ اختلاف نہیں کے گستاخ رسول صل اللہ علیہ و آل وسلم کی سزا سزائے موت ہی ہے۔

پہلا اختلافی مسئلہ یہ ہے کہ کیا گستاخی کرنے والے کے لیئے معافی ہے یا نہیں تو کچھ مخصوص شرائظ کے ساتھ ایسے شخص کی معافی ممکن کہے۔ لیکن اس بات پہ بھی علماء کا اختلاف ہے۔

مندرجہ بالا آرٹیکل کو سمجھ کے پڑھیں تو آپ کو کافی حد تک اس اختلاف کی سمجھ آ جائے گی۔ لیکن میرے دوستو شریعئت میں کسی کو سزا دینے سے پہلے اسکا جرم ثابت ہونے کی شرط بھی سختی سے موجود ہے۔ بلا کسی عدالت اور ملزم کو صفائی کا موقعہ دیے بغیر بلا کسی واضح ثبوت کے، کسی پہ حد جاری نہیں کی جا سکتی اور صد افسوس کے ہمارے علماء بھی اس اصول لو فالو نہیں کرتے اور جزباتیت کا شکار ہو جاتے ہیں۔ دین میں جزبات کا مناسب استمال بھی فرض ہے، جیسا کہ حضرت علی کرم اللہ وجہہ نے اس شخص کو چھوڑ دیا تھا جس ظالم نے آپ کے چہرا مبارک پہ تھوک دیا تھا۔ اور اسکو بعد میں قتل کیا تھا جب ان کے نفس کی مرضی کے بجائے اللہ کی رضا درکار تھی۔

 

ممتاز قادری کا عمل درست تھا یا غلط، اس بات پہ اپنی رائے دینے کا حق صرف اُن لوگوں کو ہونا چاھیئے جن لوگوں نے سلماں تاثیر کے تمام بیانات سنے ہوں۔ جہاں تک سلمان تاثیر کے معافی مانگنے کی بات ہے تو اُس نے اپنی پریس کانفرنس میں اپنے پوینٹ آف ویو کو کلئر کیا تھا جس کو معافی کے زمرے میں لیا جا سکتا ہے۔  بلکل اسی طرح جس طرح ایک قانون کی چند کلازیز کو برا کہنے پہ تنقید کرنے والے کو واجب القتل قرار دیا گیا۔ {دونوں پاٹیوں کے یہ دونوں عمل شک کی بنیاد مہیّا کرتے ہیں} وہ قانون جو ایک انسان کا بنایا ہوا ہے جس میں غلطی کی گنجا ئش کو دور کرنے میں کو ہرج نیہں۔ اب اس بات کا یہ مطلب نہیں کے خدا نا خواستہ یہ قانون ہی غلط ہے۔ سلمان تاشیر سے فرط جزبات میں یہی غلطی ہوئی جس کو اس نے اپنی پریس کانفرنس میں کلئر کرنے کی کوشش کی۔ میرا زاتی خیال ہے کے اس قانون میں ایک ِکلاز یہ بھی ہونی جا ہیے کہ اگر کوئی شخص جان بوجھ کے کسی پہ گستاخی کا جھوٹا الزام لگائے گا تو ایسے شخص کے جھوٹ کی سزا بھی سزائے موت ہونی چا ہیئے۔ اگر میں یہ کہوں کہ اس قانوں میں یہ کمی ہے تو کیا میں بھی واجب القتل ہو جکا ہوں؟ ہاں میں ہی تسلیم کرتا ہوں کہ سلمان تاثیر کا تنقید کا طریقہ انتہائی نا مناسب تھا جس کو سلپ آف ٹنگ کا چانس بھی دیا جا سکتا ہے، جبکہ اس شخص نے اپنی غلطی کا اعتراف بھی کر لیا۔ تو یہاں معافی کی گنجائش بھی بنتی ہے۔ جیسا کہ علماء نے جنید جمشید کو دی تھی۔

 

 ممتاز قادری نے سلمان تاشیر کو مارنے کا فیصلہ اس کی تقریر کی بنیاد پہ کیا تھا، اس بیان کے اوپر بھی علماء میں اختلاف ہے کہ اس بیان کومخصوص گستا خی کے معانی میں کیسے لیا جائے۔ اور یہ یاد رکھیں کہ دین کے اصول کے مطابق کسی شخص پہ کسی بھی ڈاوٹ کی صورت میں حد جاری نہیں کی جا سکتی۔ اسلام میں با قاعدہ ایسے قوانین ہیں جو توبہ کا مکمل راستہ دیتے ہیں۔ اگر ممتاز قادری کا بیان عدالت میں یہ ہوتا کے اس نے زاتی طور پہ کسی زاتی محفل میں سلمان تاثیر کوخود ایسی گستاخی کرتے دیکھا ہے تو یہ کیس مختلف ہوتا۔ اور فیصلہ ان کے خلاف نہ ہوتا۔

https://www.youtube.com/watch?v=NFeesaElIuI

 

جہاں تک بات ممتاز قادری کی حمایت کرنے یا نہ کرنے کی ہے تو برائے مہربانی اس مسئلہ کو کفر اور اسلام کی جنگ نہ سمجھیں۔ اس بارے میں ہر کسی کا اختلاف ہو سکتا ہے اورانشاء اللہ اپنا مختلف نظریہ رکھنے پہ کوئی اسلام سے خارج نہیں ہو گا۔ آپ سب پڑھے لکھے لوگ ہیں اورننج پہ علم حاصل کرنے کے مقصد سے آتے ہیں۔ آپ لوگ ان باتوں کو زاتیات پہ نہ لے جایا کریں۔ نظریاتی اختلاف تو تمام انبیاء علیہم اسلام نے بھی خندہ پیشانی سے فیس کیئے اور یہی ہمارا فرض ہے۔

 

مہربانی فرما کراس ڈسکشن کو مزید بحث کا شکار مت کیجیئے گا۔ میرا مقصد کسی کی دل آزاری نہیں۔ میں نے یہ بات کئی سال پہلے ہی دوستوں میں کر دی تھی کہ اگر ممتاز قادری صاحب کی نیئت میں سچائی تھی تو وہ اللہ اور قادری صاحب بہتر جانتے ہیں۔ پاکستان کے ساتھ اسلامی جمہوریہ لگا لینے سے یہ اسلامی ملک نہیں بن گیا، اگریہ اسلامی ملک ہوتا تو سلمان تاثیر کا حکومتی سطح پہ ٹرایئل کیا جاتا اور حکومت خود سلمان تاثیر کا احتساب کرتی۔ جس ملک کا آیئن گوروں کی پیداوار ہو وہاں شریعت کےمطاپق فیصلے ممکن نہیں ہوتے۔ آپ کو بات پسند آئے یا نہیں انگریزی لاء کے مطابق ممتاز قادری سزاء سے نہیں بچ سکتے تھے۔ {یہ بات کئی سال پہلے میں نےقریبی دوستوں سے کہی تھی} ہاں اگر اس ملک میں اسلامی نظریاتی کونسل ایک فعال ادارے کے طور پہ کام کر رہا ہوتا تو قادری صاحب کو عمر قید سے زیادہ سزا نہیں دی جا سکتی تھی۔

 

اگرمیرے فیلوز اس معملہ پہ پروڈکٹیو گفتگو کرنا چاہیں تو آپکو خوش آمدید ورنہ میں یہاں سلمان تاثیر کو بے گناہ ثابت کرنے کے لیئے ہر گز نہیں آیا۔ اور نہ ہی میرا مقصد ممتاز قادری کے عمل کی مزمّت کرنا ہے۔ ہم لوگوں کو چا ہیئے کہ کسی ملّا کی بات کو اندھا دھند فالو نہ کریں، یہ بہت شر اور فساد کا دور ہے، ہمیں ایسے سخت نظریات کے پرجار سے گریز کرنا جا ہیئے جو فساد کا سبب بن سکتے ہوں۔ کیونکہ قرآن کے مطابق فساد قتل سے بڑا گناہ ہے۔

ہمیں چاہیئے ہم علمی گفتگو کریں نہ کے منصف بن کرزاتی حملے کرنا شروع کر دیں۔ اسلام میں معافی کی بے انتہا گنجائیش ہے۔ رسول اللہ صل اللہ علیہ و آلہ وسلم نے زنا کا ارتکاب کرنے والی عورت کو کتنے سالوں بعد حد جاری کی؟ ہمیں جو زندگی حاصل ہے وہ آخر مہلت کا ہی تو دوسرا نام ہے، جس پہ جرم ثابت ہو تو بیشک سزا دینی چاہیئے۔ یہ ساری بحث اسی لیئے ہو رہی ہے کہ ملزم کو ٹراِیئل کی محلت نہیں دی گئی۔  ملّاوں کو چاہیئے تھا کے وہ سلمان کے ٹرایئل کی جنگ لڑتے، نہ کہ فتوہ داغ کر اپنے فرض سے دستبرار ہو جاتے اور قادری کی بے بسی کا تماشا دیکھتے۔ میں ملّاوں کو بھی برابر کا قصوروار سمجھتا ہوں جو آج سڑکوں پہ اپنی سیاست کر رہے ہیں٫ 


جو لوگ اس کیس کے زمہ دار ہیں، اللہ ان سے حساب لے گا، آپ اس کیس کے منصف نہیں، نا ہی ہی کیس آپ لوگوں کی رعیّت میں آتا ہے۔ جب آپ سب لوگ اس کیس کے منصف نہیں تو کیوں اختلاف میں اپنی حدوں سےبڑھ رہے ہیں؟

Constructive views on this matter shall be welcomed and appreciated, Stay blessed...... 

Note:

Jo hazrat Tahirul Qadri se nafrat kerte hon wo aik bari hasti ka ye farman yad rakhen k "ye mat dekho kon keh raha hai, ye dekho kia keh raha hai"

Views: 2070

Reply to This

Replies to This Discussion

Plz dont consider this post in support of Salman Taseer, my simple point is k Nabi (SAWW) se mohabbat kerne walay "adal" (justice) k beghair faisla nahi kerte. Taseer ko apne bayan k kuch arsa bad hi mar diya gaya, may be wo b junaid ki tarha tauba tayeb ho jata, jabke Mumtaz Qadri ka case decide kerne me takriban 5 years lagay. Ulema ko mil k Taseer k khilaf case kerna chahiye tha then jo b adalat decide kerti yehi adal ka takaza tha. 

آپ نے بحث کو بہت اچھے سے سمیٹ لیا ہے جو نکات ہم نےاخذ کیے تھے وہ آپ نے بیان کر دیے ہیں۔ساری بات کا حاصل یہ ہے کہ قادری نے جس وقت یہ اقدام کیا اس کے دل دماغ کی حالت کا کوئی گواہ نہیں ۔ شریعت کے تقاضے اگر پورے نہ ہوں تو حد نافذ ہوتی ہے اگر شک شبہ کی گنجائش ہو  صورتحال بدل جاتی ہے یہ  علما  اگر اس وقت گورنر کا ٹرائیل کرتے تو دونوں پارٹیوں کی نیت بھی سامنے آ جاتی ۔

جب کسی مسلؑے میں کنفوژن آ جائے اور حق باطل کی پہچان مشکل ہو جاے تو معاملہ اللہ پر چھوڑ دینا چاہیے  اصولی طور پر یہ خکومت کی ذمی داری تھی کہ معاملہ کی تحقیق کرتی اور بات کو اس نہج  تک جانے نہ دیتی کہ ابہام کی گنجائش بنتی ۔ اور زمین پر فساد پیدا ہوتا۔ لیکن جس معاملہ مین ابہام کی کوئی صورت نا رہے وہاں توبہ کی گنجائش نہیں۔ کیونکہ خوارج اس بات کا مضخکہ بنا لیں گے کہ جب چاہا تکفیر رسالت کر دی اورپھر معافی مانگ لی۔ کیونکہ یہ بھی احایث سے ثابت ہے کہ بعد از منافقین کا جنازہ پڑھانے سے حضور ﷺ کو منع فرما دیا گیا تھا۔

گورنر کے بعد از بیان سے یہ تو معلوم ہوتا ہے کہ وہ یہ نہیں کہنا چاہ رہا تھا یا وہ اس قانون کے خلاف نہیں تھا لیکن یہ بات دور دور تک نظر نہیں آیئ کہ اس کو اس بات کے نادانستگی میں بھی کہہ جانے کا قلق ہوا ۔ یا شرمندگی ہوئی۔

 اسی طرح قادری کے بعد از بیانات سے اس کی نیت پر کمزوری کا شائیبہ ہوا

تو بات کا مقصد صرف یہ ہے کہ ٹرائیل ہونا چاہیے تھا تاکہ دنوں طرف سے معاملے کی وضاحت ممکن ہوتی

لیکن دیکھا جائے تو کچھ معاملوں مٰن اللہ خود اپنا فیصلہ دیکھا دیتا ہے اور صاحب بصیرت اس کا فہم بھی پا لیتے ہیں۔اسی لیے کہا تھا کہ ہدایت اپنی اپنی 

Generally you may have noticed k jab kisi insan ka matlab koi dosra shaks na samaj sakay to wo apni clarification hi deta hai, na k mafi mangta hai k me ne koi ghalat bat ki hai, aalaw kisam ki ethics walay log to aisa kerte hain but salman taseer jaise blunt or batameez log aisa sochne se kasir hote hain. Or yahan wohi bat hai jaisa k ap ne bola k hum kisi ki niyyat me nahi ghuss sakte, sharaie tor pe uske alfaz pe trust kerna kafi hai.

تو جب کوئی ایسا کردار نہیں رکھتا تو اس کا آخری وقت بھی ایسا ہی گزرتا ہے بیشک اللہ بہت بڑا منصف ہے۔

mazrat k sath bhai,,,me koi behas nei chahta,,,bas aik baat puchhna chahta hn k us ny nawaz k zia ul haq bnaye huwy qanoon ko bura kaha,, lekin ye basically hai to ALLAH ka hi bnaya huwa qanoon na,,aur khud  AAP HAZARAT MUHAMMAD PBUH ny is qanoon py amal karwaya,,,wo indirectly to usi qanoon ko kala qanoon keh raha na jo QURAN O HADEES me majood hai,,,jo ALLAH ka bnaya huwa hai,,,zia ul haq,nawaz ny to isko laagu kiya h na,,,wo is qanoon ko kala qanoon un dono ka name lekar keh raha ha,,ye bilkul esy nei h jesy kehna beti ko aur sunana bahu ko,,,

baqi tarmeems wali baat thk h k esy hi kisi k kehny par ya chand rupon ki khatir kisi par esa jhoota muqdma na ho,,,

Mere bhai basically ap meri bat ko samaj rahay ho, we are on the same page. As I said Taseer ne batameezi se apna view dia jis ka natija us ne bhugat lia. As I said in the start of the post, beshak Nabi (SAWW) k gustakh ki saza mout k siwa kuch nahi.

beshak,,yes bro me apki baat samjh chuka tha but tahar ul qadri ka byan sun k mind is baat py zara atka tha,,to ab clear ho gya,,,so thanx,,,

You are welcome buddy and thanks for understanding my point of view.

Dono us jga hain jahan unka faisla behtar hora hoga...
kon kasoor war hai kon nahi ..
aap sb log khamkh thak rahay .. ju log zinda hai un k baray main sochiay aur discuss kejay

Sara bat ye hai k jane hamari qom ko confused rehna kion pasand hai, why dont we know to call a spade a spade. Is post ka purpose other side of the picture dikhana hai na k kisi ki side lena. We are not used to learn lessons from our mistakes, thats why we dont grow up. I believe in "whenever you loose, dont loose the lesson"

But unfortunately hum log kisi criticism/discussion ko apni har ya jeet ka masla bana letay hain.

I would also like to invite Ahmed & Mr. Kamui to share their views here constructively. I hope no taunt or personal attack will be done. I will appreciate if we could learn something better by your point of view.

P.S.

Ahmed I hope you are not holding the grudge of last argument we had on a religious issue related to bro/sis matter. Dont worry I am always open to learning and accepting my mistakes (subject to provisions of logic and religion). 

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service