Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

مسکنِ ماہ و سال چھوڑ گیا
دِل کو اُس کا خیال چھوڑ گیا
تازہ دم جسم و جاں تھے فُرقت میں
وصل، اُس کا نِڈھال چھوڑ گیا
عہدِ ماضی جو تھا عجب پُرحال !
ایک وِیران حال چھوڑ گیا
ژالہ باری کے مرحَلوں کا سفر
قافلے، پائمال چھوڑ گیا
دِل کو اب یہ بھی یاد ہو، کہ نہ ہو !
کون تھا، کیا ملال چھوڑ گیا
میں بھی اب خود سے ہُوں جواب طلب
وہ مجھے، بے سوال چھوڑ گیا

Views: 151

Reply to This

Replies to This Discussion

sun kr afsos hua

afsos smile wala

g bhai

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service