Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

ہم خدا نہیں ہیں‘ پھر خدا کی طرح لوگوں کو جج کیوں کر نے لگتے ہیں؟

جب آپ کو کسی کی بات نہیں ماننی ‘ تو اس کو اور اس کے ساتھ موجود تمام ہم خیال لوگوں کو لیبل کر دو۔ان کو کوئی بھی نام دے دو۔سیکیولر، ماڈرن قسم کے لوگ ایسے مبلغین کو ’’قدامت پسند، دقیانوسی، شدت پسند ‘‘ کہتے ہیں۔ اور دین والے جن کی عادت ہوتی ہے دوسرے دین والوں کی ٹانگ کھینچنا، وہ ان کو ’’کم علم، کم عقل، گناہگار، ناپاک‘‘ اور ایسے ہر اس لقب سے پکارتے ہیں جن میں کہنے والے کی پاکیزگی کی نمائش ہو، اور مبلغ کی تذلیل ہو۔ بہانے۔ سب بہانے ہیں۔ کہ بس کسی طرح حق بات ماننے سے بچ جاؤ۔اس وقت ہم بھول جاتے ہیں کہ یہ تو محض ایک آزمائش ہے۔ ہم خدا نہیں ہیں‘ پھر خدا کی طرح لوگوں کو جج کیوں کر نے لگتے ہیں؟ ہم خود فرشتے نہیں ہیں‘ پھر فرشتوں کی طرح لوگوں کے گناہوں اور خامیوں کا حساب کتاب کیوں رکھتے ہیں؟

    

Views: 334

Reply to This

Replies to This Discussion

bilkul..... we don't have a ri8 to judge other until we did not put ourselves on others situation..... pehly khud ki Islah zarori hai phir dosron pr ungli uthani chaiye....

Pehly apni islah krni chaye phir dosron ki .........islah krny or ungli uthany may farq hota hy or mera ni khiyal k islah yafta insaan dosron pr ungli uthye ga 

ہم خدا نہیں ہیں‘ پھر خدا کی طرح لوگوں کو جج کیوں کر نے لگتے ہیں؟ ہم خود فرشتے نہیں ہیں‘ پھر فرشتوں کی طرح لوگوں کے گناہوں اور خامیوں کا حساب کتاب کیوں رکھتے ہیں؟

ALLAH hm sb ko seedi rasta dikhaye .. Ameen..!!

★anum  According to my point of view, First we shuold be a Good Muslim. We are Muslims by born ALHAMDOLILLAH. It is  Islam that makes you a good human

exectly (y) 

RSS

© 2022   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service