We are here with you hands in hands to facilitate your learning & don't appreciate the idea of copying or replicating solutions. Read More>>

Looking For Something at vustudents.ning.com? Click Here to Search

www.bit.ly/vucodes

+ Link For Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution

www.bit.ly/papersvu

+ Link For Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More


Dear Students! Share your Assignments / GDBs / Quizzes files as you receive in your LMS, So it can be discussed/solved timely. Add Discussion

How to Add New Discussion in Study Group ? Step By Step Guide Click Here.

پاکستانی ڈرامے ،اخلاقی شعور

ایک بزرگ ہاتھ میں فائل پکڑے لڑکی کے سامنے بیٹھا تھا۔ خوش اخلاق لڑکی نے بزرگ کی بات نہایت دھیان سے سنی پھر بزرگ کی مطلوبہ فائل پر کام کرنے لگی ۔ ’’میں تمہارے باپ جیسا ہوں ‘‘ بزرگ نے باتوں کے دوران اپنائیت کا اظہار کرتے ہوئے لڑکی سے کہا ۔

یہ سننا ہی تھا کہ اس خوش اخلاق لڑکی نے فائل اٹھا کر بزرگ کے سامنے پھینک دی اور انہیں فورا دفعہ ہوجانے کو کہا۔ بیچارہ بزرگ فائل پکڑے وہاں سے اٹھ کھڑا ہوا۔ میں ہکی بکی یہ منظر دیکھ رہی تھی۔ اس خوش اخلاق لڑکی کی یہ حرکت اس کی کولیگ بھی دیکھ رہی تھی ۔ کولیگ نے لڑکی سے اس تلخ رویے کی وجہ پوچھی ۔ لڑکی بولی ۔ اس آدمی نے کہا یہ میرے باپ جیسا ہے اگر یہ میرے باپ جیسا ہے تو یہ یہی ڈیزرو کرتا ہے۔

میں جو ابھی تک ششدر تھی کہ آخر یہ ماجراکیا ہے ۔ اچھی بھلی خوش اخلاق لڑکی اچانک اتنی سی بات پر کیسے آپے سے باہر ہوگئی کہ ایک بزرگ کی اتنی بے عزتی کردی ۔ قسط وار ڈرامہ ’’مبارک ہو بیٹی ہوئی ہے‘‘ ختم ہوچکا تھا مگر میں اس ایک سین میں الجھ کر رہ گئی ۔ آخر اس بزرگ کا قصور کیا تھا۔ صرف یہ کہنا کہ میں تمہارے باپ جیسا ہوں۔ لڑکی کا رویہ ایسا کیوں تھا ۔ صرف اس لیے کیونکہ وہ اپنے باپ سے نفرت کرتی تھی اور نفرت کرنے کا جواز بھی تھا اس کے پاس کیونکہ اس کے باپ نے دوسری شادی کرلی اور پہلی بیوی سے بے اعتنائی برتی وجہ صرف یہ تھی کہ وہ بیٹے کی ماں نہ بن سکی بلکہ چار بیٹیوں کو جنم دینے والی ماں تھی ۔ وہ لڑکی اسی ماں کی ایک بیٹی تھی جسے بچپن میں ماں پرکیے جانے والے ظلم اور باپ کی بے اعتنائی نے باپ سے متنفر کردیا۔

باپ پر غصہ فطری بات ہے ۔ مانا کہ باپ کے رویے سے دلبرداشتہ ہوکر اس کی ماں نے الگ رہنے کا فیصلہ کرلیا اور اپنی چھوٹی چھوٹی بیٹیوں کے ساتھ تنہا زندگی گزاری ۔ ان کی اچھی پرورش کی انہیں تعلیم دلواء یہاں تک کہ وہ بیٹیاں اتنی قابل تھیں کہ ماں کو ان پر فخر ہوتا ۔اسی ماں کی اتنی اچھی تربیت کے باوجود اور اتنی قابلیت کے بعد بھی ایک لڑکی جاہلانہ انداز سے بزرگ سے بات کرتی دکھائی گئی وجہ تھا اس کا باپ جس کی نفرت اتنی شدید تھی کہ وہ باپ کی عمر کے بزرگ کو بھی حقارت سے دیکھنے لگی ۔

یہ ہے اے آر وائی ڈیجیٹل چینل پر چلنے والا ٹی وی ڈرامہ ۔ لڑکی اور بزرگ بھی اس ڈرامے کا کردار ہیں ۔۔ مگر بات صرف ڈرامے یا کردار کی نہیں ہے ۔ سوال یہ ہے کہ میڈیا چینلز ہمیں کیا دکھا رہے ہیں ہماری نسل کو کیا ترغیب دے رہے ہیں ۔

بزرگوں کا ادب احترام اس سین میں مفقود ہو کر رہ گیا ۔ ایک بزرگ جو عزت دے رہا اپنی بیٹی سمجھ رہا اس کی اتنی توہین کرنا ۔ اس سین میں کہاں بھلائی دکھائی گئی کہاں گئی ماں کی تربیت کہاں گئی تعلیمی قابلیت جو فقط اتنا شعور نہ دے سکی کہ بزرگوں کا احترام کرنا چاہیے ۔ باپ کے گناہوں کی سزا دوسروں کو دینا سب کو اپنے باپ جیسا سمجھنا اپنے آپ کو صرف اس لیے اس قابل بنانا کہ باپ اور رشتہ داروں کو نیچا دکھا سکیں۔ ہم نوجوان نسل کو کیا سکھا رہے کہ باپ برا ہے تو اسے معاف کرنے کے بجائے اس سے اپنی محرومیوں کا بدلہ لیں باپ سے اتنی نفرت کریں کہ کوئی بیٹی سمجھے تو اسے حقارت سے پیش آئیں۔ افسوس کے ساتھ مگر یہ سچ ہے ہمارے آج کل کے ٹی وی ڈراموں میں بھلائی کا پہلو اتنا نمایاں نہیں جتنا برائی کا ۔ یہی وجہ ہے کہ ہمارے رویوں میں شدت آچکی ہے ہمارے ذہنوں کی اسکرین پر چلنے والے ایسے سین ہمیں حقیقی زندگی میں تلخ بنادیتے ہیں ۔ ہمارے معاشرتی رویے صبر و برداشت اور ہر احساس سے عاری ہوتے جارہے ہیں ۔ بچے والدین سے متنفر ہوتے جارہے نہ لحاظ رہا نہ بڑوں کا ادب۔

میڈیا پر بھاری زمہ داری عائد ہوتی ہے کہ ایسے ڈرامے دکھائے جائیں جو اچھائی کی ترغیب دیں جس میں بزرگوں کی عزت و احترام کے پہلو کو نمایاں ہو۔ بدلہ لینے کے بجائے معاف کردینے کی ترغیب دیں۔ اگر میڈیا نے ڈراموں کا معیار نہ بہتر بنایا تو بہت جلد ہماری نوجوان نسل ان ڈراموں کی دیکھا دیکھی اپنی اخلاقی مذہبی اور ثقافتی اقدار کو فراموش کر بیٹھے گی۔ معیاری ڈراموں کے معاشرے پر اچھے اثرات مرتب ہوتے جبکہ غیر معیاری ڈرامے اخلاقی پستی کا ذریعہ بنتے ۔

+ How to Follow the New Added Discussions at Your Mail Address?

+ How to Join Subject Study Groups & Get Helping Material?

+ How to become Top Reputation, Angels, Intellectual, Featured Members & Moderators?

+ VU Students Reserves The Right to Delete Your Profile, If?


See Your Saved Posts Timeline

Views: 175

.

+ http://bit.ly/vucodes (Link for Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution)

+ http://bit.ly/papersvu (Link for Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More)

+ Click Here to Search (Looking For something at vustudents.ning.com?)

+ Click Here To Join (Our facebook study Group)

Reply to This

Replies to This Discussion

Main dramo main changes lanay bhetr nahi smjhu ga, janta hn k sb muj sy ikhtilaf krty hain , koee pagl kehta hai or kch log to extremist b lakin haqiqat ye hai k hmari qom wo hai jo hr ghlt kam pr prdy dali jati hai. or drama pr drama pr drama pr drama pr drama , koee sch smny lana nahi chata, serial dramas nay ani wali nsl ko skhti apnany pr mjbor kr dia hai. is awam nay hr cheez pr etny prdy daly k , is ki sb sy bri misal is waqt k hukamran hain. bap kch kehta , baita kch or beti kch or mann kch, aik dosry ko hi ni janty , is ki waja ye hai k unho ny apny bap , mann, sb bronn ko jhot bolty daikha hai or kis ko sch smjhian or kis ko jhot, ye hi hal qom ka b hai. bap agr jhoty shks ka sath dy raha ho to beta khd b jhot ka sath dy ga lakin wo janta ho ga zrur jb Allah ko yad krta ho ga zrur sochta to ho ga main b jhota bap b jhota or mann b sb jhoty, kis pr aitbar krn or kis pr na krn, agr bap scha hai to aik jhoty k sath q khra hai akhir kch to hai, kahi to bap b shamil hai us k sath. nateejatan beta soch laita hai k jhot hi sb hai, ghlt keay jao or jhot ko support keay jao, 2sri janib wo baity or batiann hain jo bap or man ki jhoty krdar daikh kr tng hain, or jb nzr doraty hain to koee scha nahi milta jis ny un ki shaksiat ko sakht kr dia hai. wo daikh rhy hian k sb jhot or buraee pr prdy dal rhy hain or un ko koee umeed nzr nahi ati k kahi kch acha hony lga hai q k hr koee jhot or buraee pr prdy dal raha hai or ghlt ko promote kia jata hai, jo ghlti krta us ko sza dainy ki bjy kndonn pr uthaya jata hai, to sway nfrat k or phr kya krn wo? maira swal b hai to kya krn agr nafrat b na krn ? kya khd ko mar dain ya phr unhi ghlt logo main shamil ho jain? agr media ghlt batonn pr prdy ny dalta to aj ye dor ata hi na.

U R right My bro Any how in some where We also Involve in it But Now We can improve it Also Every Thing Has Two Effect in our personal Life Positive and Negative If we chose the right one then no way whats the matter is we will fight till we reach to the Positive destination May Allah Almighty Help Us And Gave strength to Chose Right and Positive Path in a negative One Ameen

exactly........ very sad

RSS

© 2020   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service

.