We are here with you hands in hands to facilitate your learning & don't appreciate the idea of copying or replicating solutions. Read More>>


Looking For Something at vustudents.ning.com? Click Here to Search

اک ہی فن تو ہم نے سیکھا ہے..... جس سے ملیے اُسے خفا کیجیے

اک ہی فن تو ہم نے سیکھا ہے

جس سے ملیے اُسے خفا کیجیے

ہے تقاضا میری طبیعت کا
ہر کسی کو چراغ پاکیجیے

ملتے رہیے اُسی تپاک کے ساتھ
بے وفائی کی انتہاکیجیے

مجھ سے کہتیں تھیں وہ شراب آنکھیں
آپ وہ زہر مت پیا کیجیے

مجھ کو عادت ہے رُوٹھ جانے کی
آپ مجھ کو منالیا کیجیے

رنگ ہر رنگ میں ہے داد طلب
خون تھوکوں تو واہ واہ کیجیے

Share This With Friends......

+ Click Here To Join also Our facebook study Group.

This Content Originally Published by a member of VU Students.

+ Prohibited Content On Site + Report a violation + Report an Issue


..How to Join Subject Study Groups & Get Helping Material?..


Views: 61

See Your Saved Posts Timeline

Reply to This

© 2019   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service