Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.



جُنید بغدادی کہتے ہیں کہ میں نے اِخلاص ایک حجام سے سیکھا..ایک میرے اُستاد نے کہا کہ تُمہارے بال بہت بڑھ گے ہیں اب کٹوا کے آنا..پیسے کوئ نہیں تھے پاس میرے..
حجام کی دُکان کے سامنے پہنچےتو وہ گاہک کے بال کاٹ رہا تھا..اُنہوں نے عرض کی چاچا اللہ کے نام پہ بال کاٹ دو گے..یہ سُنتے ہی حجام نے گاہک کو سائیڈ پر کیا...اور کہنے لگا..پیسوں کے لیے تو روز کاٹتا ہوں..اللہ کیلئے آج کوئی آیا ہے.. اب اُنکا سر چوم کے کُرسی پہ بیٹھایا روتے جاتے اور بال کاٹتے جاتے..حضرت جنید بغدادی نے سوچا کہ زندگی میں جب کبھی پیسے ہوئے تو اِن کو ضرور دوں گا.. عرصہ گزر گیا..یہ بڑے صوفی بزرگ بن گئے...
ایک دن ملنے کیلئے گئے واقعہ یاد دلایا اور کچھ رقم پیش کی..تو حجام کہنے لگے جُنید تو اتنا بڑا صُوفی ہو گیا تجھے اتنا نہیں پتا کہ جو کام اللہ کے لئے کیا جائے اِس کا بدلہ مخلوق سے نہیں لیتے..

Views: 125

Reply to This

Replies to This Discussion

One of my fav ...

nice sharing girl

ALLAH Bless You...Ameen

ameen...

jazak ALLAH^.^

^_^

Ni peeny boht wadiya:-P

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service