،،مرشد تھا جس کا ڈر
!... وہی بات ہو گئ 
مرشد میری سنو
!.... کہ مجھے مات ہو گئی

مرشد میرے تو جذبے

!... سارے ہی بیان تھے 
مرشد اسی کے ساتھ
!.... میرے دو جہاں تھے

مرشد خوشی ملی بھی تو
!.... آ کرپلٹ گئی
مرشد میرے نصیب پر
!... سیاہی الٹ گئی

مرشد اب زندگی میں
!.... سویرا نہیں رہا
مرشد جو میرا تھا وہ
!....اب میرا نہیں رہا

Views: 133

Reply to This

Replies to This Discussion

Ary wah 

Kia kehny Zohaib jee  .. ^_^)!

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service