Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

آپ اِس طرح تو ہوش اُڑایا نہ کیجیے،

یُوں بن سنور کے سامنے آیا نہ کیجیے،

یا سر پہ آدمی کو بِٹھایا نہ کیجیے،

یا پھر نظر سے اُس کو گِرایا نہ کیجیے،

یُوں مَد بھری نِگاہ اُٹھایا نہ کیجیے،

پینا حرام ہے تو پلایا نہ کیجیے،

کہیے تو آپ محو ہیں کس خیال میں،

ہم سے تو دِل کی بات چُھپایا نہ کیجیے،

تیغِ سِتم سے کام جو لینا تھا لے چُکے،

اہلِ وفا کا یُوں تو صفایا نہ کیجیے،

مَیں آپ کا، گھر آپ کا، آئیں ہزار بار،

لیکن کسی کی بات میں آیا نہ کیجیے،

اُٹھ جائیں گے ہم آپ کی محفل سے آپ ہی،

دُشمن کے رُوبرو تو بِٹھایا نہ کیجیے،

دِل دور ہوں تو ہاتھ مِلانے سے فائدہ؟

رسمًا کسی سے ہاتھ مِلایا نہ کیجیے،

محروم ہوں لِطافتِ فطرت سے جو نصیر

اُن بےحسوں کو شعر سُنایا نہ کیجیے

Views: 34

Reply to This

Looking For Something? Search Below

Latest Activity

Iram Shahi replied to + IFRAH ANSAR's discussion Poetry
44 minutes ago
+ IFRAH ANSAR replied to + IFRAH ANSAR's discussion Poetry
47 minutes ago
+ IFRAH ANSAR liked + IFRAH ANSAR's discussion Poetry
48 minutes ago
+ IFRAH ANSAR posted discussions
48 minutes ago
+ IFRAH ANSAR replied to + IFRAH ANSAR's discussion Poetry
1 hour ago
Iram Shahi updated their profile
1 hour ago
+ IFRAH ANSAR liked +!!★彡 "Royal boy"彡★✓'s discussion Suspend...
1 hour ago
+ IFRAH ANSAR liked + ! ! ! ! ム爪 ♡♡'s discussion یہ تکلیف عارضی ہے
1 hour ago

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service