Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

کیا دیا جائے ہمیں انعام زیر ِغور ہے
سُن رہے ہیں ہم ، ہمارا نام زیر ِغور ہے
ریت کے ٹیلے اُڑا کر لے گیا طوفان ِ باد
ساکنان ِ دشت کا انجام زیر ِغور ہے
دیکھیے کیا رنگ لائے منصفوں کا فیصلہ
میرے بارے میں ترا الزام ، زیر ِغور ہے
جو نگاہ ِ غیر میں بھی قابل ِ تحسین ہو
کیا کریں ایسا نرالا کام ، زیر ِغور ہے
موسم ِنامہرباں کو اِس زمیں پر بھیج کر
وقت نے بھیجا ہے جو پیغام زیر ِغور ہے
ایک دوراہے پہ آ کر رُک گیا ہے کارواں
کون سی ہے شاہراہ ِ عام زیر ِغور ہے
پُوچھتے ہیں مجھ سے شاہد میرے سارے ہم نشیں
................اِن دنوں کیوں تلخی ِ ایام زیر ِغور ہے

Views: 9

Reply to This

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service