Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

محبت جب سکونِ زندگی برباد کرتی ہے
تو لب خاموش رہتے ہیں نظر فریاد کرتی ہے


عشق نے غالب نکما بنا دیا
ورنہ ہم بھی آدمی تھے کام کے

اس قدر کشش ہے تُمہَاری اداؤں میں
ہم اگر تُم ہوتے تو خود سے عشق کر لیتے


معصوم کس قدر تھا میں آغازِ عشق میں
اکثر تو اس کے سامنے شرما گیا ہوں میں


تو ملے یا نہ ملے میرے مقدر کی بات ہے
سکون بہت ملتا ہے تمہیں اپنا سوچ کر


واللہ کیا کشش تھی کہ مت پوچھیئے صاحب
مجھ سے یہ دل لڑ پڑا ، مجھے یہ شخص چاہئیے


حسن ہی لے ڈوبا تھا فقط یوسفؑ کو
بھلا پیغمبر بھی بازاروں میں بکا کرتے ہیں

Views: 9

Reply to This

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service