Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

زندگی دیکھ تجھے ہم سے خَسارہ کیا ہے
جینے تُو خود نہیں دیتی تو, ہمارا کیا ہے

ایک دریا کو شِناسائی ہے رستے کی مگر
اس کو یہ عِلم نہیں ہے کہ کنارہ کیا ہے

زندگی پوچھنے والوں کے سوالات کو سُن
اور اِن سب کو بتا اِن کا کفارہ کیا ہے

تو ابھی جیت کے آیا ہے خوشی بنتی ہے
تجھ کو احساس نہیں ہے کہ تو ہارا کیا ہے

یہ مرا شہر ہے اور اِسکے مکیں اندھے ہیں
کس کو معلوم یہاں کس کا اشارہ کیا ہے

تو میری پہلی محبت تھی مگر آخری تھی
میں ترے بعد ہی جا سمجھا سہارا کیا ہے

عشق سے ہار کے لَوٹے تو ہمیں یاد آیا
دن میں دیکھے ہوئے تاروں کا نظارہ کیا ہے

پاوں لگتے ہیں مجھے میرے زمیں کے نیچے
عشق کے نام پہ اس دل میں اتارا کیا ہے

Views: 13

Reply to This

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service