Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.


خون پتوں پہ جما ہو جیسے 

پھول کا رنگ ہرا ہو جیسے 

بارہا یہ ہمیں محسوس ہوا 

درد سینے کا خدا ہو جیسے 

یوں ترس کھا کے نہ پوچھو احوال 

تیر سینے پہ لگا ہو جیسے 

پھول کی آنکھ میں شبنم کیوں ہے 

سب ہماری ہی خطا ہو جیسے 

کرچیں چبھتی ہیں بہت سینے میں 

آئنہ ٹوٹ گیا ہو جیسے 

سب ہمیں دیکھنے آتے ہیں مگر 

نیند آنکھوں سے خفا ہو جیسے 

اب چراغوں کی ضرورت بھی نہیں 

چاند اس دل میں چھپا ہو جیسے 

روز آتی تھی ہوا اس کی طرح 

اب وہ آیا تو ہوا ہو جیسے 

Views: 21

Reply to This

Looking For Something? Search Below

VIP Member Badge & Others

How to Get This Badge at Your Profile DP

------------------------------------

Management: Admins ::: Moderators

Other Awards Badges List Moderators Group

Latest Activity

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service