Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.


نہ ہمسفر نہ کسی ہم نشیں سے نکلے گا
ہمارے پاؤں کا کانٹا ہمیں سے نکلے گا

میں جانتا تھا کہ زہریلا سانپ بن بن کر
ترا خلوص مری آستیں سے نکلے گا

اسی گلی میں وہ بھوکا فقیر رہتا تھا
تلاش کیجے خزانہ یہیں سے نکلے گا

بزرگ کہتے تھے اک وقت آۓ گا جس دن
جہاں پہ ڈوبے گا سورج، وہیں سے نکلے گا

گزشتہ سال کے زخمو! ہرے بھرے رہنا
جلوس اب کے برس بھی یہیں سے نکلے گا

Views: 18

Reply to This

Replies to This Discussion

Humsafar Shayari Hindi - Humsafar Poetry Urdu - Humsafar Quotes Hindi

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service