Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.


کتنی دفعہ کہوں نہیں ہوتا
مجھ سے رشتوں کا خوں نہیں ہوتا

عشق ہوتا ہے باعثِ توقیر
عشق وجہِ جنوں نہیں ہوتا

نیند کی گولیاں بتاتی ہیں
مال و زر میں سکوں نہیں ہوتا

گر تو اِتنی ہی خوبصورت ہے
پھر مجھے پیار کیوں نہیں ہوتا

پر کٹا کر اڑان کی کوشش
بات یوں ہے کہ یوں نہیں ہوتا

بھوک نے یہ بتا دیا ہے مجھے
اس سے گھاتک فسوں نہیں ہوتا

باپ سے خود کو مت سمجھ دانا
چھت سے اونچا ستوں نہیں ہوتا

Views: 12

Reply to This

Replies to This Discussion

wo jo khta tha kuch nhi hota...

ab wo rota h chup nhi hota...

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service