Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

تیری بیوی کےجسم جتنا حصہ ڈھکا ہوا ہے اس پر تیرا حق ہے مگر جو حصہ کھلا ہے وہ تو شاملات ھے اس کو دیکھنے کا ہم سب کا حق ھے۔
کہتے ہیں قاہرہ سے اسوان جانے والی گاڑی میں سوار اس عمر رسیدہ شخص کی عمر کم از کم ساٹھ تو ہوگی اور اوپر سے اس کی وضع قطع اور لباس، ہر زاویے سے دیہاتی مگر جہاندیدہ اور سمجھدار بندہ لگتا تھا۔
ایک اسٹیشن پر گاڑی رکی تو ایک نوجوان جوڑا سوار ہوا جو اس بوڑھے کے سامنے والی نشست پر آن بیٹھا۔
صاف لگتا تھا کہ نوبیاہتا ہیں۔
مگر افسوس کی بات یہ تھی کہ لڑکی نے انتہائی نامناسب لباس برمودہ پینٹس کے ساتھ ایک بغیر بازؤں کی کھلے گلے والی شرٹ پہن رکھی تھی جس سے اس کے شانے ہی نہیں اور بھی بہت سارا جسم دعوت نظارہ بنا ہوا تھا۔
مصر میں ایسا لباس پہننا کوئی اچھوتا کام نہیں، اور نا ہی کوئی ایسا لباس پہنے کسی لڑکی کو شوہدے پن سے دیکھتا یا تاڑتا ہے۔
مگر دوسرے مسافروں کے ساتھ ساتھ لڑکی کے خاوند کی حیرت دید کے قابل تھی کہ اس بوڑھے نے لڑکی کو دیدے پھاڑ پھاڑ کر دیکھنا شروع کر دیا تھا۔
چہرے سے اتنا پروقار اور محترم نظر آنے والے شخص کی حرکتیں اتنی اوچھی، بوڑھے کی نظریں تھیں کہ کبھی لڑکی کے شانوں پر تو کبھی لڑکی کی عریاں ٹانگوں پر۔
اوپر سے مستزاد یہ کہ بوڑھے نے اب تو باقاعدہ اپنی ٹھوڑی کے نیچے اپنی ہتھیلیاں ٹیک کر گویا منظر سے تسلی کے ساتھ لطف اندوز ہونا شروع کر دیا تھا۔
بوڑھے کی ان حرکات سے جہاں لڑکی بے چین, پہلو پر پہلو بدل رہی تھی وہیں لڑکا بھی غصے سے تلملا رہا تھا،
بالآخر اس نے پھٹتے ہوئے کہا:
بڑے میاں، کچھ تو حیا کرو،
شرم آنی چاہئے تمہیں،
اپنی عمر دیکھو اور اپنی حرکتیں دیکھو، اپنا منہ دوسری طرف کرو اور میری بیوی کو سکون سے بیٹھنے دو۔
بوڑھے دیہاتی نے لڑکے کی بات تحمل سے سنی اور متانت سے جواب دیا:
لڑکے، میں نا تو جوابا تجھے یہ کہنا چاہتا ہوں کہ تو خود کچھ شرم و حیاکر۔
نا ہی تجھے یہ کہوں گا کہ تجھے اپنی بیوی کو ایسا لباس پہناتے ہوئے شرم نہیں آتی؟
تو ایک آزاد انسان ہے،
بھلے ننگا گھوم اور ساتھ اپنی بیوی کو بھی گھما۔
لیکن میں تجھے ایک بات ضرور کہنا چاہتا ہوں، کیا تو نے اپنی بیوی کو ایسا لباس اس لئے نہیں پہنایا کہ ہم اسے دیکھیں۔ آگر تیرا منشا ایسا تھا تو پھر کاہے کا غصہ اور کس بات کی تلملاہٹ؟
بوڑھے نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا؛ دیکھ میرے بیٹے،
تیری بیوی کا جتنا جسم ڈھکا ہوا ہے اس پر تیرا حق ہے کہ تو دیکھ،
مگر اس کا جتنا جسم کھلا ہوا ہے اس پر تو ہم سب عوام کا حق بنتا ہے کہ ہم دیکھیں۔
اور اگر تجھے میرا اتنا قریب ہو کر تیری بیوی کو دیکھنا برا لگا ہے تو میرا نہیں میری نظر کا قصور ہے جو کمزور ہے اور مجھے دیکھنے کیلئے نزدیک ہونا پڑتا ہے۔
بوڑھے کی باتیں نہیں اچھا درس تھا مگر ذرا ہٹ کر،
لوگوں نے جان لیا تھا کہ بوڑھا اپنا پیغام اس جوڑے تک پہنچا چکا ہے۔
لڑکی کا چہرہ آگر شرم سے سرخ ہو رہا تھا تو لڑکا منہ چھپائے چلتی گاڑی سے اترنے پر آمادہ۔
اور ہوا بھی ایسے ہی،
اگلے اسٹیشن پر لڑکے نے جب گاڑی سے اترنے کیلئے باہر کی طرف لپکنا چاہا تو بوڑھے نے پیچھے سے آواز دیتے ہوئے کہا؛
بیٹے ہمارے دیہات میں درخت پتوں سے ڈھکے رہیں تو ٹھیک،
ورنہ آگر کسی درخت سے پتے گر یا جھڑ جائیں تو ہم اسے کلہاڑی سے کاٹ کر تنور میں ڈال دیا کرتے ہیں۔
For More Like my page : Click to view full post

Views: 126

Reply to This

Replies to This Discussion

ahan nice lesson

thanks

I preferably dont wanted to comment on this post but kia hai k...

"Shayed k utar jaye tere dil me meri baat..."

 Sir ye bat yad rakhen Islam zabardasti pe believe nahi kerta, iski pehli preference salamti hai, so isi liye islam me "raeyyat" ka concept hai, means k har kisi ko ye haq nahi hai k wo naseehatain kerta rahay. Pehle apni zaat pe islam implement kerna hai then kisi ko nasihat kerne ka haq hasil hai or wo bhi apki raeyyat se bahir nahi ho sakta. Warna aisi naseehat "fisaad" ka sabab banti hai of Fisaad qatal se bara gunah hai Quran k mutabiq. 

What i mean to say is jo harkat is kahani k mutabiq is "Highly Pious" buzurg ne ki hai, kia ap me se koi aisa kerna chahay ga? Apka kia khayal hai k agar ye harkat sab log hi kerna shuru ker dain to mashray me achaie or buraie ki jang har mohallay or galli me hona shuru nahi ho jaye gi? Kia ye Fisaad ka sabab nahi bane ga? 

Sir ap to is post ko sirf share ker rahay ho, or apki intension i know k bohat achi hai, but naseehat kerne k kuch asloob hotay hain. Kuch do's and don'ts hotay hain. Kisi ko awam k samnay naseehat kerne ko sharaiat ne itna munasib nahi qarar dia (unless in highly exclusive cases). 

Han is post ka message theek hai, content munasib nahi. Sometimes afsos hota hai k sometimes hum log apni deeni jahalat me ye bhool jate hain k Quran k mutabiq Allah ne Husband-Wife k liye aik libas ki tarha qarar dia hai - that clearly means k agar koi shaks public me kisi shaks ki biwi pe comment kare ga to beshak k uski biwi kitni hi buri aurat ho, kia wo usko defend nahi kare ga. Kia us shaks pe sharaie farz nahi k uski biwi uski raeyyat me ati hai na k aik aise be-sharam insan pe jo Islam k is basic principle ko nahi janta k Allah ne har mard or aurat ko apni nazarain neechi kerne ka hukam dia hai. 

Mujhe hairat hoti hai k akhir kisi aurat k revealing kapron pe aik "naik parveen" mard ki nazar jati hi kion hai?

Thanks for sharing.. :)

thanks bro

ahan bro great lesson

RSS

Looking For Something? Search Below

Latest Activity

+ ! Agha RoShaaan Khan+ commented on + M.Tariq Malik's page Chit Chat Wall
9 hours ago
+ ! Agha RoShaaan Khan+ replied to Mr Siren Head's discussion Ning Chats
9 hours ago
イム乃ひ posted a video

PERFECT..

13 hours ago
Mr Siren Head commented on + M.Tariq Malik's page Chit Chat Wall
15 hours ago
Mr Siren Head replied to Mr Siren Head's discussion Ning Chats
15 hours ago
Mr Siren Head replied to Mr Siren Head's discussion Ning Chats
15 hours ago
AVAYA replied to Mr Siren Head's discussion Ning Chats
15 hours ago
AVAYA replied to Mr Siren Head's discussion Ning Chats
15 hours ago

VIP Member Badge & Others

How to Get This Badge at Your Profile DP

------------------------------------

Management: Admins ::: Moderators

Other Awards Badges List Moderators Group

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service