Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

کوئی دستک کوئی ٹھوکر نہیں ہے
تمہارے دل میں شاید در نہیں ہے
اسے اس دشت کا کیا خوف ہوگا
وو اپنے جسم میں ہو کر نہیں ہے
میاں کچھ روح ڈالو شاعری میں
ابھی منظر میں پس منظر نہیں ہے
تری دستار تجھ کو ڈھو رہی ہے
ترے کاندھوں پہ تیرا سر نہیں ہے
اسے لعنت سمجھئے آئنوں پر
کسی کے ہاتھ میں پتھر نہیں ہے
یہ دنیا آسماں میں اڑ رہی ہے
یہ لگتی ہے مگر بے پر نہیں ہے

Views: 46

Reply to This

Replies to This Discussion

ahaaaaaaa nice murshad bhai ❤️❤️❤️

Shukriya behna

Dastak Poetry - Dastak Shayari - Dastak Poetry Urdu - Dastak Poetry Hindi

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service