Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

“فرصتیں ملیں جب بھی
رنجشیں بھلا دینا،
کون جانے سانسوں کی
مہلتیں کہاں تک ہیں

آؤ جانچ لیتے ہیں درد کے ترازو پر،
کس کے غم کہاں تک ہیں، شدتیں کہاں تک ہیں

ایک شام آجاؤ، کھل کر حالِ دل کہہ لیں،
کون جانے سانسوں کی
مہلتیں کہاں تک ہیں

کچھ عزیز لوگوں سے پوچھنا تو پڑتا ہے،
آج کل محبت کی قیمتیں کہاں تک ہیں

فرصتیں ملیں جب بھی
رنجشیں بھلا دینا،
کون جانے سانسوں کی
مہلتیں کہاں تک ہیں”

Views: 37

Reply to This

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service