Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

خزاں کا ذکر نہ ذکر بہار کرتے رہے

تجھی کو تیری نگاہوں سے پیار کرتے رہے

متاع درد کہ بڑھتی رہی نہ جانے کیوں

علاج درد مرے غم گسار کرتے رہے

دیار حسن کے جلوے تھے خوب تر لیکن

مری نظر کے لیے انتظار کرتے رہے

مجھے تو رقص مصائب بھی راس آ نہ سکے

وہ بزم ہائے سرود و ستار کرتے رہے

کبھی یقین محبت نہ تھا نہ ہے لیکن

فریب خوردہ ترا اعتبار کرتے رہے

Views: 97

Reply to This

Replies to This Discussion

mji ko design bnani hi but nhi hi wo jaga roni ti hi

کبھی یقین محبت نہ تھا نہ ہے لیکن

.. فریب خوردہ ترا اعتبار کرتے رہے

khoob

        

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service