Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

جینے کے اُن کے ساتھ بہانے چلے گئے - اُٹھ کر گئے وہ یوں کہ زمانے چلے گئے

جینے کے اُن کے ساتھ بہانے چلے گئے
اُٹھ کر گئے وہ یوں کہ زمانے چلے گئے
-----
احساس جن کے ہونے سے ہونے کا تھا کبھی
اُن بے گھروں کے سارے ٹھکانے چلے گئے
----
کرنا یہاں پہ کیا تھا ، مگر کر رہے ہیں کیا
ہم کیا کریں کہ اپنے سیانے چلے گئے
-----
جو پاس تھے تو قصہ بھی کیا دلفریب تھا
کھولی جو اب کتاب فسانے چلے گئے
-----
رونق تو چار سو ہے مگر مفلسوں کو کیا
خالی ہیں ان کی جیبیں خزانے چلے گئے
-----
تپتا ہے آفتاب تو جلتی ہے یہ زمیں
موسم بھی ان کے ساتھ سہانے چلے گئے
-----
حاسد سمجھ نہ لیجے ، یونہی سوچتا ہوں میں
اب وہ نہ جانے کس کو رجھانے چلے گئے
-----
ابرک محبتوں میں نہ دعوے کیا کریں
کیوں خود نہ آپ اُن کو منانے چلے گئے
.
.
.
۔۔۔۔ اتباف ابرک
May be an image of one or more people and text

Views: 21

Reply to This

Looking For Something? Search Below

Latest Activity

VIP Member Badge & Others

How to Get This Badge at Your Profile DP

------------------------------------

Management: Admins ::: Moderators

Other Awards Badges List Moderators Group

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service