We are here with you hands in hands to facilitate your learning & don't appreciate the idea of copying or replicating solutions. Read More>>

Looking For Something at vustudents.ning.com? Click Here to Search

www.bit.ly/vucodes

+ Link For Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution

www.bit.ly/papersvu

+ Link For Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More


Dear Students! Share your Assignments / GDBs / Quizzes files as you receive in your LMS, So it can be discussed/solved timely. Add Discussion

How to Add New Discussion in Study Group ? Step By Step Guide Click Here.


(ہم انسان کے روپ میں اپنے لیے خدا تلاشتے ہیں)۔
۔
ہم ایک ایسا انسان چاہتے ہیں جو ہمارے گرد مانندِ حصار ہر لمحہ سایے کی طرح موجود رہے۔ ہمیں اپنی بانہوں میں بھرے اور بھینچ کر سینے سے ایسے لگائے رکھے کہ ہمیں زندگی کی گرمی ، اور ہر رنج و غم و الم اور مصائب و پریشانیوں سے امن و سلامتی اور سکون و اطمینان محسوس ہو ، جو ہمارے لیے ایک ایسی پُرسکون پناہ گاہ بنے کہ زندگی کے ستاتے ہوئے لمحوں میں ہم اس کی طرف اُمید سے دیکھیں ، اس کی موجودگی ہی ہمارے لیے خوشی اور اطمینان ہو۔
۔

جو ہمیں ویسے ہی سمجھتا ہو جیسے کہ ہم خود کو سمجھا جانا چاہتے ہیں ، جو ہمارے ہر جذبے اور احساس کو ویسے محسوس کرے جیسے کہ ہم خود محسوس کرتے ہیں ، جو ہماری چاہتوں اور خواہشات کی باریک نبضوں کی دھڑک تک کا آشنا و جانکار ہو۔ جو ہمارے ہر درد کا ہمراز و ہمنوا ہو ، جو ہمیں طعنہ نہ دے ، غصہ نہ کرے اور ہمیں ڈانٹ نہ پلائے ، اور ہمارے لیے اس کی چاہت میں کمی واقع نہ ہو ، جو ہماری ذات سے تھکن اور غم کا احساس نہ کرے ، جس کے ساتھ ہم بچہ بن سکیں۔
۔

جو ہمارے ناقابلِ بیان درد کا آشنا ہو ، جب ہم ناراض ہوں تو ہمیں مسلسل منائے اور مناتے ہوئے تھکتا نہ ہو ، بھلے ہی غلطی ہماری ہو ، اگر ہم اس سے ناراض ہوں تو وہ ہم سے ناراض نہ ہو بلکہ ہمیں دیکھ کر اس کی آنکھیں ہمیشہ چمکتی رہیں ، لب مسکاتے رہیں اور پیشانی کشادہ رہے۔
۔

جو ہماری ذات کی حقیقی تاریکیوں میں ہمیں دیکھ کر بھی ہم سے نفرت نہ کرے ، ہم سے دور نہ ہو بلکہ تمام تر عیوب کے ساتھ ہمیں قبول کرے ، جو ہمارے دامنِ داغدار دیکھ کر ہم سے اپنا دامن نہ چھڑائے ، جو ہماری زندگی کے مقاصد میں ہمارا بصیر و ہمسفر ہو۔
۔

جس کی محبت ، جانثاری ، وفاداری ، اور اخلاصِ کامل کا مرکز و محور ہماری ذات ہو ، جس کے وجود میں ہم بلا جھجھک پیوست ہو سکیں اور خود کو اس کے وجود کا حصہ محسوس کر سکیں ، جس کی ہمنوائی و ہمراہی و ہم نشینی میں ہم خود کو ، اپنے وجود کو ، اپنی ذات و شخصیت کو خاص محسوس کر سکیں ، جو اپنی وجود کے لمس سے ہمارے وجود کو معتبر کر دے ، جو ہماری انانیت کو سہہ سکے۔
۔تو کیا ایسا انسان ممکنات میں سے ہے ؟ کیا ہم واقعی ایسا انسان ہی چاہتے ہیں ؟ یا خدا چاہتے ہیں جو بلا شکرتِ غیرے ہمارا ہو ؟

+ How to Follow the New Added Discussions at Your Mail Address?

+ How to Join Subject Study Groups & Get Helping Material?

+ How to become Top Reputation, Angels, Intellectual, Featured Members & Moderators?

+ VU Students Reserves The Right to Delete Your Profile, If?


See Your Saved Posts Timeline

Views: 106

.

+ http://bit.ly/vucodes (Link for Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution)

+ http://bit.ly/papersvu (Link for Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More)

+ Click Here to Search (Looking For something at vustudents.ning.com?)

+ Click Here To Join (Our facebook study Group)

Reply to This

Replies to This Discussion

ek dfa phir prhoo sb aur meera first cmnt bhiii

lemonade u k pass mn hn u ko or kya chahiey

haan yee bhii haiii

g bilkul mumkin ha kuch b na mumkin ni hota

RSS

© 2020   Created by +M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service

.