We are here with you hands in hands to facilitate your learning & don't appreciate the idea of copying or replicating solutions. Read More>>

Looking For Something at vustudents.ning.com? Click Here to Search

www.bit.ly/vucodes

+ Link For Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution

www.bit.ly/papersvu

+ Link For Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More


Dear Students! Share your Assignments / GDBs / Quizzes files as you receive in your LMS, So it can be discussed/solved timely. Add Discussion

How to Add New Discussion in Study Group ? Step By Step Guide Click Here.

پاکستان نے بہت ہونہار سپوت پیدا کئے ہیں اور انہوں نے دن رات ایک کرکے اس قوم کی بہت زیادہ خدمت کی ہے لیکن افسوس کہ ان کی زیادہ قدر نہ کی گئی۔آئیے آپ کو ایسی کچھ شخصیات کے بارے میں بتاتے ہیں۔

ڈاکٹر عبدالقدیر خان

اگر آج پاکستان ایک نیوکلئیر طاقت ہے تو اس بات کا سہرا بہت حد تک ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو جاتا ہے جوذوالفقار علی بھٹو کے کہنے پر 70کی داہئی میں ہالینڈ سے پاکستان تشریف لائے اور ان تھک محنت کے بعد انہوں نے پاکستان کے ایٹم بم کے خواب کو حقیقت میں بدل دیا۔پاکستان نے1998ءمیں ایٹمی دھماکہ کیا اور ایٹمی ممالک کی فہرسےت میں شامل ہوگیالیکن پرویز مشرف نے بیرونی دباﺅ پر ڈاکٹر قدیر کو ایٹمی پھیلاﺅ کی پاداش میں دنیا سے معافی مانگنے پر مجبور کیا۔اس معافی کے بعد بین الاقوامی اخبارات میں پاکستان اور ڈاکٹر قدیر کے خلاف آرٹیکل چھپے ۔


عبدالستار ایدھی
اگر دکھی انسانیت کی خدمت کی بات آئے تو عبدالستار ایدھی کانام سرفہرست ہوتا ہے۔ایدھی فاﺅنڈیشن کا نام کسی تعارف کامحتاج نہیں اور یہ عظیم انسان گذشتہ60سال سے دکھی انسانیت کی خدمت کررہا ہے۔پاکستان بھر میں ان کے250سے زائد سینٹرز قائم ہیں جہاں بیماروں،یتیم بچوں اور لاوارث خواتین کو سہارا دیا جاتا ہے۔2005ءکے تباہ کن زلزلے میں انہوں نے ان تھک کام کیا اور لاکھوں افراد کومدد فراہم کی۔سیلاب کے دنوں میں بھی انہوں نے

تباہ حال لوگوں کی بہت مدد کی۔


آغا حسن عابدی

اپنی اعلیٰ بینکنگ سے یہودی بینکاروں کی نیند اڑانے والے آغا حسن عابدی پاکستانی قوم کے ان چند سپوتوں میں سے ہیں جنہوں نے دنیا بھر میں نام پیدا کیا۔جب 1972ءمیں حکومت پاکستان نے بینکوں کو نیشنلائزکیا تو انہوں نے ہاکستان سے باہر جاکر بی سی سی آئی کی بنیاد رکھی اور اس بینک نے دیکھتے ہی دیکھتے دنیا بھر میں کامیابی سے کام کیا لیکن پاکستانی اور مسلمان ہونے کی انہیں سزا دی گئی اور یہودی میڈیا نے ان کے خلاف زہر آلود پروپیگنڈہ کیا جس سے بی سی سی آئی کو ناکام بنایا گیا۔یہ آغاحسن عابدی ہی تھے جنہوں نے 1980ءکی دہائی میں پاکستان میں کمپیوٹر سائنس کی ترویج کے لئے اپنی جیب سے 100ملین   روپے کا   

  FASTفنڈ قائم کیااور اسی کی بدولت2000ءمیں

کی بنیاد رکھی گئی جس کی وجہ سے آج ہزاروں نوجوان کمپیوٹر کی تعلیم حاصل کرکے دنیا بھر میںنام پیدا کررہے ہیں۔ان کا انتقال 1996ءمیں ہوا لیکن کسی کوبھی یہ یاد نہ تھا کہ آغا صاحب نے اس قوم کے لئے کیا کیا قربانیاں دی تھیں۔

ڈاکٹر محمد رمضان چھیپا
کراچی میں ایمبولینسزکا انتہائی کامیاب نیٹ ورک چلانے والے رمضان چھیپا کسی تعارف کے محتاج نہیں۔عبدالستار ایدھی کی طرح انہوں نے بھی دکھی انسانیت کی دن رات خدمت کی ہے اور اب اپنی ایمبولینس کے نیٹ ورک کو ملک بھر میں پھیلا رہے ہیں۔

انصاربرنی

بین الاقوامی شہرت یافتہ انصار برنی کو انسانی حقوق کے علمبردار ہونے کی وجہ سے دنیابھر میں قدر کی جانا جاتا ہے۔وکالت کے پیشے سے تعلق رکھنے والے انصار برنی نے1980ءکی دہائی میں قیدیوں کے حقوق کے لئے دن رات کام کیا۔انہوں نے عرب ممالک میں بچوں کے حقوق کے لئے آواز اٹھائی اور بیرون ملک جیلوں میں قید پاکستانیوں کو واپس لانے میں اہم کردار ادا کیا۔

سیلانی ویلفئیر ٹرسٹ

بے گھر لوگوں کو چھت فراہم کرنے کے لئے یہ ٹرسٹ 1999ءمیں مذہبی رہنما مولانا بشیر فاروق قادری کی سرکردگی میں قائم کیا گیا۔یہ ٹرسٹ دن میں دو بار 30ہزار سے زائد افراد کو مفت کھانا فراہم کرتا ہے ۔اپریل2011ءمیں اس ٹرسٹ نے غریب لوگوں کو روزگار فراہم کرنے کے لئے سی این جی رکشہ بھی فراہم کئے۔

عمران خان
کرکٹ کی وجہ سے دنیا بھر میں پاکستان کا نام روشن کرنے والے عمران خان نے 1991ءمیں شوکت خانم کینسر ہسپتال قائم کرکے پوری دنیا کو حیران کردیا۔کینسر جیسی موذی مرض کے علاج کے لئے جدید سہولیات سے آراستہ اس ہسپتال میں اب تک لاکھوں افراد کا علاج کیا جاچکا ہے اور ان میں کئی لوگ ایسے بھی تھے جن کے پاس کینسر کا مہنگا علاج کروانے کے پیسے بھی نہیں تھے لیکن شوکت خانم ہسپتا ل میں ان افراد کا مفت علاج کیا گیا۔

سرآدم جی داﺅد
جنوری1948ءمیں پاکستان میں انتقال کرنے والے سرآدم جی داﺅد نے کئی سکول،ہسپتال اور کالج قائم کرکے غریبوں کے دکھوں کا مداوہ کرنے کی سر توڑ کوشش کی۔

شہزاد رائے
معروف گلوکار شہزاد رائے نے2002ءمیں زندگی ٹرسٹ کے نام سے فلاحی ادارہ قائم کیاجومزدوری کرنے والے بچوں کو تعلیم کی طرف لاتا ہے۔اس ٹرسٹ کے ذریعے ہزاروں ایسے بچوں کو تعلیم دی جارہی ہے جو غربت کی وجہ سے سکول جانے کی حیثیت نہیں رکھتے۔

+ How to Follow the New Added Discussions at Your Mail Address?

+ How to Join Subject Study Groups & Get Helping Material?

+ How to become Top Reputation, Angels, Intellectual, Featured Members & Moderators?

+ VU Students Reserves The Right to Delete Your Profile, If?


See Your Saved Posts Timeline

Views: 675

.

+ http://bit.ly/vucodes (Link for Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution)

+ http://bit.ly/papersvu (Link for Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More)

+ Click Here to Search (Looking For something at vustudents.ning.com?)

+ Click Here To Join (Our facebook study Group)

Reply to This

Replies to This Discussion

Informative good job

thank you for appreciation  

keep it up 

thank u Mehar pai.

such a nyc post.. keeep it up (Y)

Thank you Rawaha 

Nice Work...
Well done WolveRine!~ !!

haha thank you MCCQEEN 

Pleasure WolveRine!~ !!

^_^ so sweet 

RSS

© 2019   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service

.