Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

پہلے پہل تھا اس کا محبت سے دل بھرا - پھر رفتہ رفتہ ساری شکایات سے گیا

کب غم کہے سنے سے ، کسی بات سے گیا
میں رات تھا ، اندھیرا کبھی رات سے گیا
-----
پہلے پہل تھا اس کا محبت سے دل بھرا
پھر رفتہ رفتہ ساری شکایات سے گیا
-----
جانے یہ کیسے فاصلے آئے ہیں درمیاں
مجھ میں جو بس رہا تھا ملاقات سے گیا
-----
کچھ اس لئے بھی آنکھ میں رنگینیاں ہیں کم
جو نقش روشنی تھا خیالات سے گیا
-----
اس حادثے میں حادثہ در اصل یہ ہوا
جو دل زباں دراز تھا ہر بات سے گیا
-----
ابرک نہ رنج کر یہ یہاں کا رواج ہے
بچ کر نہ کوئی زیست کی اس گھات سے گیا
.
.
.
.
۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اتباف ابرک

Views: 38

Replies to This Discussion

                                                                                              اس حادثے میں حادثہ در اصل یہ ہوا  
                                                                                                جو دل زباں دراز تھا ہر بات سے گیا 
awlaa

RSS

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service