We have been working very hard since 2009 to facilitate in your learning Read More. We can't keep up without your support. Donate Now.

www.bit.ly/vucodes

+ Link For Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution

www.bit.ly/papersvu

+ Link For Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More

اس بچے کا کیا ہوا۔۔۔۔۔۔ کارٹر کے پاس کوئی جواب نہیں تھا۔


قحط زدہ علاقے میں گھومتے ہوئے اچانک اس کی نظر ایک بچے پر پڑی، ہڈیوں کا ایک ڈھانچہ، بھوک سے نڈھال، چند سال کا ایک بچہ آہستہ آہستہ رینگنے کی کوشش کر رہا تھا، چند گز کے فاصلے پر موجود ایک گدھ اس انتظار میں تھا کہ اس بچے کی جان نکلے اور وہ اس کو نوچ کھائے۔
یہ کیون کارٹر تھا ایک عام سا جنوبی افریقی فوٹو گرافر،اس نے وہ تصویر کھینچی اور واپس چلا آیا, چند ہی دن میں یہ تصویر پوری دنیا میں مشہور ہو گئی،وہ پوری دنیا میں مشہور ہو گیا، لیکن ہر جگہ اس سے یہی سوال ہوتا، اس بچے کا کیا ہوا۔۔۔۔۔۔ کارٹر کے پاس کوئی جواب نہیں تھا۔ احساس ندامت اسے چین نہیں لینے دے رہا تھا اور چند دن بعد اس نے خود کشی کر لی۔۔۔۔۔۔

سنا ہے سندھ کے اندر کوئی 150 بچے بھوک کے ہاتھوں زندگی کی بازی ہار گئے اور ان کی مدد کے لیے جانے والے عمر کے آخری حصے میں موجود شاہ نے خوب بوفے اڑائے، ستم در ستم یہ ہے کہ اس پر کوئی ندامت اور شرمندگی نہیں، کتنی ڈھٹائی سے اس بے غیرتی پر مطمئن ہیں سب، کیون کارٹر کی طرح کوئی خودکشی نہ سہی، چند ندامت کے آنسو ہی سہی، آنسو بھی نہیں چند الفاظ ہی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
لیکن اللہ نے اپنی زمین کے بدترین لوگ ہم پر مسلط کیے ہیں، کسی اور کے نہیں خود ہمارے ہاتھوں، اور اس سے معافی نہ مانگی تو وہ وقت دور نہیں کہ جب کوئی گولہ،کوئی بم،کوئی سیلاب یا کوئی قحط آپ کے دروازے پر بھی ہو گا اور آپ کی تصویر لینے کے لیے کوئی کیون کارٹر بھی نہیں آئے گا۔۔
:-( Astaghfirullah قحط زدہ علاقے میں گھومتے ہوئے اچانک اس کی نظر ایک بچے پر پڑی، ہڈیوں کا ایک ڈھانچہ، بھوک سے نڈھال، چند سال کا ایک بچہ آہستہ آہستہ رینگنے کی کوشش کر رہا تھا، چند گز کے فاصلے پر موجود ایک گدھ اس انتظار میں تھا کہ اس بچے کی جان نکلے اور وہ اس کو نوچ کھائے۔ یہ کیون کارٹر تھا ایک عام سا جنوبی افریقی فوٹو گرافر،اس نے وہ تصویر کھینچی اور واپس چلا آیا, چند ہی دن میں یہ تصویر پوری دنیا میں مشہور ہو گئی،وہ پوری دنیا میں مشہور ہو گیا، لیکن ہر جگہ اس سے یہی سوال ہوتا، اس بچے کا کیا ہوا۔۔۔۔۔۔ کارٹر کے پاس کوئی جواب نہیں تھا۔ احساس ندامت اسے چین نہیں لینے دے رہا تھا اور چند دن بعد اس نے خود کشی کر لی۔۔۔۔۔۔ سنا ہے سندھ کے اندر کوئی 150 بچے بھوک کے ہاتھوں زندگی کی بازی ہار گئے اور ان کی مدد کے لیے جانے والے عمر کے آخری حصے میں موجود شاہ نے خوب بوفے اڑائے، ستم در ستم یہ ہے کہ اس پر کوئی ندامت اور شرمندگی نہیں، کتنی ڈھٹائی سے اس بے غیرتی پر مطمئن ہیں سب، کیون کارٹر کی طرح کوئی خودکشی نہ سہی، چند ندامت کے آنسو ہی سہی، آنسو بھی نہیں چند الفاظ ہی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ لیکن اللہ نے اپنی زمین کے بدترین لوگ ہم پر مسلط کیے ہیں، کسی اور کے نہیں خود ہمارے ہاتھوں، اور اس سے معافی نہ مانگی تو وہ وقت دور نہیں کہ جب کوئی گولہ،کوئی بم،کوئی سیلاب یا کوئی قحط آپ کے دروازے پر بھی ہو گا اور آپ کی تصویر لینے کے لیے کوئی کیون کارٹر بھی نہیں آئے گا۔۔


+ http://bit.ly/vucodes (Link for Assignments, GDBs & Online Quizzes Solution)

+ http://bit.ly/papersvu (Link for Past Papers, Solved MCQs, Short Notes & More)

+ Click Here to Search (Looking For something at vustudents.ning.com?)

+ Click Here To Join (Our facebook study Group)


Views: 539

Comment

You need to be a member of Virtual University of Pakistan to add comments!

Join Virtual University of Pakistan

Comment by + ..✦ S α ɾ α K ԋ α ɳ✦ on March 19, 2014 at 10:30pm
Comment by N@Z -MSCS on March 19, 2014 at 10:26pm

good work ..........

Comment by + ..✦ S α ɾ α K ԋ α ɳ✦ on March 19, 2014 at 12:58am
Comment by + ๑Syeda Esha ๑۩ ,¸¸,ø on March 18, 2014 at 9:14pm

very well............ awesome work ggg

Comment by + ..✦ S α ɾ α K ԋ α ɳ✦ on March 18, 2014 at 5:23pm

well said Sadan......v true

Comment by Sadan on March 18, 2014 at 10:40am

when shall we question  our traitors : 

Those who handed over Mangrawal to India, ,  who was  Prime Minister of Juna Garh ?  Who was son of that Prime Minister who  welcomed Indian Forces  to a state  which had announced Annexation with Pakistan  ?

 Did  we punish him ?    

 

YES  ----  We made  HIM ( the son)  our   Prime Minister .....  

Son of Shah Nawaz -   Zulfiqar Ali Bhutto  - 

 Long live Pakistani Nation.  

we made  the grand daughter also Prime Minster  and now  we are  looking  forward  in the name of Sind Festival  - The Superman Bilawal Zardari Bhutto  to be next Prime Minister ...  

 

Shame for all  of us. 

Long live Pakistan.

Everyone  who  has  the power and a say today  is responsible.   Allah SWT  gives time  but  JUSTICE is there.  

Comment by + ..✦ S α ɾ α K ԋ α ɳ✦ on March 17, 2014 at 7:45pm

Ameen and thanks Fighting Falcon Shakeel

Comment by +Shakeel Ahmad on March 17, 2014 at 7:37pm

Comment by +Shakeel Ahmad on March 17, 2014 at 7:37pm

Comment by +Shakeel Ahmad on March 17, 2014 at 7:37pm

Allah hamarey hukmirano ko hadayat dey. Aameen

© 2020   Created by +M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service

.