We are here with you hands in hands to facilitate your learning & don't appreciate the idea of copying or replicating solutions. Read More>>

Looking For Something at vustudents.ning.com? Click Here to Search

ایک شخص کا ایک بیٹا تھا،
روز رات کو دیر سے آتا اور جب بھی اس سے باپ پوچھتا کہ بیٹا کہاں تھے.؟ 
تو جھٹ سے کہتا کہ دوست کے ساتھ تھا. ایک دن بیٹا جب بہت زیادہ دیر سے آیا تو باپ نے کہا کہ بیٹا آج ہم آپ کے دوست سے ملنا چاہتے ہیں. 
بیٹے نے فوراً کہا اباجی اس وقت؟ 
ابھی رات کے دوبجے ہیں کل چلتے ہیں. 
نہیں ابھی چلتے ہیں. 
آپ کے دوست کا تو پتہ چلے. 
باپ نے ابھی پہ زور دیتے ہوئے کہا. 
جب اس کے گھر پہنچے اور دروازہ کھٹکھٹایا تو کافی دیر تک کوئی جواب نہ آیا. 
بالآخر بالکونی سے سر نکال کہ ایک بزرگ نے جو اس کے دوست کا باپ تھا آنے کی وجہ دریافت کی تو لڑکے نے کہا کہ اپنے دوست سے ملنے آیا ہے. 
اس وقت، مگروہ تو سو رہا ہے بزرگ نے جواب دیا. 
چاچا آپ اس کو جگاؤ مجھے اس سے ضروری کام ہے، 
مگر بہت دیر گزرنے کے بعد بھی یہی جواب آیا کہ صبح کو آجانا. 
ابھی سونے دو، 
اب تو عزت کا معاملہ تھا تو اس نے ایمرجنسی اور اہم کام کا حوالہ دیا مگر آنا تو درکنار دیکھنا اور جھانکنا بھی گوارا نہ کیا. 
باپ نے بیٹے سے کہا کہ چلو اب میرے ایک دوست کے پاس چلتے ہیں.
جس کا نام خیر دین ہے.
دور سفر کرتے اذانوں سے ذرا پہلے وہ اس گاؤں پہنچے اور خیردین کے گھر کا دروازہ کھٹکھٹایا، 
مگر جواب ندارد، بالآخر اس نے زور سے اپنا نام بتایا کہ میں الله ڈنو، مگر پھر بھی دروازہ ساکت اور کوئی حرکت نہیں. 
اب تو بیٹے کے چہرے پہ بھی فاتحانہ مسکراہٹ آگئی. 
لیکن اسی لمحے لاٹھی کی ٹھک ٹھک سنائی دی، اور دروازے کی زنجیر اور کنڈی کھولنے کی آواز آئی، 
ایک بوڑھا شخص برآمد ہوا جس نے لپٹ کر اپنے دوست کو گلے لگایا اور بولا کہ میرے دوست، بہت معذرت، مجھے دیر اس لیے ہوئی کہ جب تم نے 27 سال بعد میرا دروازہ رات گئے کھٹکھٹایا تو مجھے لگا کہ کسی مصیبت میں ہو، 
اس لیے جمع پیسے نکالے کہ شاید پیسوں کی ضرورت ہے، 
پھر بیٹےکو اٹھایا کہ شاید بندے کی ضرورت ہے، 
پھر سوچا شاید فیصلے کےلیے پگ کی ضرورت ہو تو اسے بھی لایا ہوں. 
اب سب کچھ سامنے ہے، 
پہلے بتاؤ کہ کس چیز کی ضرورت ہے؟ 
یہ سن کر بیٹے کی آنکھوں سے آنسو آگئے کہ ابا جی کتنا سمجھاتے تھے کہ بیٹا دوست وہ نہیں ہوتا جو رت جگوں میں ساتھ ہو بلکہ وہ ہوتا ہے جو ایک آواز پر حق دوستی نبھانے آجائے.
آج بھی کئی نوجوان ایسی دوستیوں پہ اپنے والدین کو ناراض کرتے ہیں، باپ کے سامنے اکڑجاتے ہیں. 
ذرا دل تھام کر سوچیےکہ آپ کے حلقہ احباب اور دوستوں کا شمار ان میں سے
کس قسم میں ہوتا ہے؟

:) :)

Share This With Friends......

+ Click Here To Join also Our facebook study Group.

This Content Originally Published by a member of VU Students.

+ Prohibited Content On Site + Report a violation + Report an Issue

+ Safety Guidelines for New + Site FAQ & Rules + Safety Matters

+ Important for All Members Take a Look + Online Safety


Views: 190

See Your Saved Posts Timeline

Comment

You need to be a member of Virtual University of Pakistan to add comments!

Join Virtual University of Pakistan

Comment by Ali Raza on December 22, 2018 at 5:12pm

اس اپلی کیشن میں تمام پاکستانی ٹی وی ڈراموں کو دیکھیں، صرف اس اپلی کیشن فون میں ڈاؤن لوڈ کریں اور اگر آپ ایپ پسند کریں تو ہمیں 5 ستارے دیں

https://play.google.com/store/apps/details?id=com.dotdev.pakistanid...

Comment by + ! ! ! ! ! ! ℱιყα◕‿◕ on June 9, 2018 at 11:09pm

tHnkiewzz  + ᎥshᎪ Aʟɪ + 

Comment by + ! ! ! ! ! ! ! I҉s҉h҉a҉ ҉A҉l҉i on June 9, 2018 at 9:39pm

Nice

Comment by + ! ! ! ! ! ! ℱιყα◕‿◕ on June 9, 2018 at 8:37pm
Comment by ıllıllı βĹĂĎĔ ıllıllı on June 9, 2018 at 3:23pm

Hmmm excellent and true.

Keep sharing.

Forum Categorizes

Job's & Careers (Latest Jobs)

Admissions (Latest Admissons)

Scholarship (Latest Scholarships)

Internship (Latest Internships)

VU Subject Study Groups

Other Universities/Colleges/Schools Help

    ::::::::::: More Categorizes :::::::::::

Member of The Month

1. zohaib iftikhar

punjab, Pakistan

© 2019   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service