We have been working very hard since 2009 to facilitate in learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

موسمیاتی تبدیلی ’ایک بہت بڑا خطرہ ہے، تہذیبیں تباہ ہو سکتی ہیں

موسمیاتی تبدیلی ’ایک بہت بڑا خطرہ ہے

تہذیبیں تباہ ہو سکتی ہیں‘

فطرت اور ماحولیات پر پروگرام کرنے والے دنیا کے مشہور براڈکاسٹر سر ڈیوڈ ایٹنبرا نے کہا ہے کہ موسمیاتی تبدیلی ہزاروں سال میں دنیا کو درپیش ایک بہت بڑا خطرہ ہے۔

انھوں نے تنبیہ کی کہ اس کی وجہ سے تہذیبیں تباہ اور زیادہ تر قدرتی دنیا فنا ہو سکتی ہے۔

وہ پولینڈ کے شہر کاٹوویس میں اقوامِ متحدہ کی زیرِ نگرانی ہونے والی کانفرنس کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔

2015 میں ہونے والے پیرس معاہدے کے بعد سے پولینڈ کے شہر کاٹوویس میں ہونے والا یہ اجلاس سب سے اہم ہے۔


سر ڈیوڈ نے کہا کہ ’اس وقت ہمیں انسان کے بنائے ہوئے عالمی درجے کے بحران کا سامنا ہے۔ ہزاروں سالوں میں ہمیں سب سے بڑا خطرہ موسمیاتی تبدیلی سے ہے۔‘

’اگر ہم نے ایکشن نہ لیا تو ہماری تہذیب اور کافی زیادہ قدرتی دنیا فنا کے دہانے پہ ہے۔‘

انہوں نے کہا کہ ’دنیا کے لوگوں نے کہہ دیا ہے۔ پیغام بہت صاف ہے۔ وقت تیزی سے گذر رہا ہے۔ وہ آپ جیسے فیصلہ سازوں کے انتظار میں ہیں کہ اب عمل کریں۔‘

افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل اینٹونیو گتریس نے کہا کہ کئی ممالک کے لیے پہلے ہی موسمیاتی تبدیلی زندگی اور موت کا مسئلہ بن چکا ہے۔

انھوں نے کہا کہ دنیا کم کاربن والی معیشت کی طرف منتقلی کے کہیں قریب بھی نہیں پہنچی جہاں ہمیں ہونا چاہیئے تھا۔

اس سے قبل پولینڈ میں ماحولیاتی تبدیلی کے بارے میں کانفرنس کے آغاز پر ماحولیاتی تپش کو روکنے کے لیے سرگرم چار سرکردہ ماہرین نے خبردار کیا تھا کہ زمین ‘نازک موڑ پر پہنچ گئی ہے۔’

ایک شاذ و نادر ہونے والے واقعے میں اقوامِ متحدہ کی زیرِ نگرانی ہونے والی کانفرنس میں چار سابق صدور نے موثر فیصلہ سازی پر زور دیا۔

اس اجلاس میں مختلف کیا ہے؟

،تصویر کا کیپشنسویڈن میں ایک بچی ماحولیات کے بارے میں جلد اقدام کے حق میں مظاہرہ کر رہی ہے


اس سال اکتوبر میں ماحولیات کے عالمی ادارے آئی پی سی سی نے ایک رپورٹ جاری کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ بڑھتے ہوئے عالمی درجۂ حرارت کو 1.5 سیلسیئس تک محدود رکھا جائے۔

آئی پی سی سی کے مطابق اس مقصد کے حصول کے لیے حکومتوں کو 2030 تک گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج میں 45 فیصد تک کمی لانا ہو گی۔

تاہم ایک حالیہ تحقیق کے مطابق گذشتہ چار سال سے گرنے کے بعد کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج میں دوبارہ اضافہ ہو رہا ہے۔

ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا کہ ماحول پر اقوامِ متحدہ کے اجلاسوں کے چار سابقہ صدور نے بیان جاری کیا ہے۔ اتوار کو ایسے ہی ایک بیان میں انھوں نے فوری اقدام کی تاکید کی ہے۔

Views: 24

Comment

You need to be a member of Virtual University of Pakistan to add comments!

Join Virtual University of Pakistan

Looking For Something? Search Below

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service