Latest Activity In Study Groups

Join Your Study Groups

VU Past Papers, MCQs and More

We non-commercial site working hard since 2009 to facilitate learning Read More. We can't keep up without your support. Donate.

دعا ہے میری دیکھو ں کبھی

دعا ہے میری دیکھوں کبھی
وہ سحر جو آزاد ہو
نفرت کی آوازوں سے
ظلم کے ارادوں سے
جہل کے رواجوں سے
قرض کے اثاثوں سے
دعا ہے میری دیکھوں کبھی
شعور کے اجالوں میں
امن کی بہاروں کو
عقائد کی کتابوں میں
پیار کے پیاموں کو
دیس کے ایوانوں میں
خودی کے نگہبانوں کو
دعا ہے میری دیکھوں کبھی
وہ شام کہ جس کی سرخی میں
آدم کے تخیل کو وسعت جہاں ملے
محنت کا صلہ ہو ،خلق کو زباں ملے
فکر کو تقریب ، سچ کو اماں ملے
دعا ہے میری دیکھوں کبھی

وہ رات جو یکسر روشن ہو 
علم کے چراغوں سے
عدل کے میناروں سے
مستقبل کے ستاروں سے
دعا ہے میری دیکھوں کبھی

Views: 10

Comment

You need to be a member of Virtual University of Pakistan to add comments!

Join Virtual University of Pakistan

© 2021   Created by + M.Tariq Malik.   Powered by

Promote Us  |  Report an Issue  |  Privacy Policy  |  Terms of Service